جل پری

جل پری

جل پری

وہم ہونا خیال ہونا تھا

زندگی کو سوال ہونا تھا

تو مثالیں سنایا کرتا تھا

آپ تجھ کو مثال ہونا تھا

کس نے سوچا تھا عشق میں اک دن

نعیم تیرا یہ حال ہونا تھا

جل پری کے نصیب ایسے تھے

سارے دریا کو جال ہونا تھا

 نعیم اکرم

نوٹ: ایک شعر توقیر عباس شاہ صاحب کی تصحیح کی وجہ سے حذف کیا گیا ہے۔